:::::::::::::::::: To the reverence of Word, which makes sacred the tip of a Pen :::::::::::::::::: :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::: لفظ کی حرمت کے نام ، جو نوک ِ قلم پر احرام بندھتا ہے :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

"Before" = English Poem By Nadia umber Lodhi

Dajjal Kaun? Fascinating Urdu Article by Nadia Umber Lodhi

“دجال کون ! who is Antichrist? “نادیہ عنبر لودھی کے قلم سے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ زمین اپنی پیداوار ایک تہائ کم کر دے گی۔آسمان سے بارشوں کاسلسلہ...

earth

“Before” – English Poem By Nadia Umber Lodhi

Where we were before words , Before Universe, before Earth , In shape of black mud , Save Inside puddle, Earth ,fire ,water and wind...

shahabnama ka aik baab jo likha nahin gaya

Shahabnama Ka Aik Baab Jo Likha Na Gaya: By Prof. Fatah Muhammad Malik

Shahabnama Ka Aik Baab Jo Likha Na Gaya: By Prof. Fatah Muhammad Malik Shahnama became an instant sensation with its candid view of history of...

Mere Walid Qudratullah Shahab: Article by Saqib Shahab

Mere Walid Qudratullah Shahab: Article by Saqib Shahab Qudratullah Shahab, a prominent civil servant and author is famed for his autobiography Shahabnama. GCU Lahore’s The...

Kinds of Kites at Basant

Different Kinds of Kites for Basant in Pakistan

Patang Baazi in Indo-Pakistan is much more than the kite-flying that rest of the world knows. Where Kite-flying is a game of leisure, Patang Baazi...

Nikah: Urdu Article by Ayesha Salim Anjum

نکاح تحریر: عائشہ سلیم انجم الله نے اس دنیا میں ہر عورت کو حوا اور ہر مرد کو آدم بنا کر بھیجا ہے ۔ تاکہ...

Ford Logo

Employees in Ads put heart on Ford face

  The Ford Windstar commercial that spotlights the mothers among its engineers is among the best-liked car commercials measured since 1995 by Ad Track, USA...

Sufi Saint

Shakhsiat of Hazrat Lal Shahbaz Qalandar – By Faseeh Rezavi

  Faseeh Rezavi شخصیت قلندر لعل شہباز رح تحریر: سید فصیح رضوی سرکار شہباز قلندر رح شخصیت پر سوشل میڈیا پر کافی بحث ہوتی رہتی...

pakistani economy

Summary of External Loans and Grants for Pakistan (Lending Country/Agency)

Summary of External Loans and Grants for Pakistan (Lending Country/Agency) (PUBLIC SECTOR DEVELOPMENT PROGRAMME [PSDP] and external resources) Loans that Pakistan owes to different donors has...

sexual harassment of women in pakistan

Sexual Harassment of Women in Pakistan: Urdu Report by Nadia Umber Lodhi

جنسیہراسگی   حضرتآدمکیتخلیقکےبعدانکےدلبہلاوےکےلیےعورتیعنیاماںحواکیتخلیقکیگئی۔ حضرتآدمدنیامیںبھیجدیےگئیے۔ ہابیلقابیلکےجھگڑےسےشروعہونےوالیعورتکےحصولکیداستاںجاریہے۔بچپنمیںجنسیتشددکاشکارہونےوالیبچیاںزیادتیکےبعدموتکےگھاٹاتاردیجاتیہیں۔لیکناکثریتکامعاملہجنسیہراسگیتکہیرہتاہے۔یہبچیاںبڑےہونےکےبعدبھیاسعملسےگزرتیرہتیہیں۔آجمعاشرہخواندگیکیسطحکےلحاظسےتوترقیکررہاہےلیکنعورتکایہمسئلہجوںکاتوںہےپڑھیلکھیانپڑھسباسکاشکارہوتیہیں۔زیادہترزبانبندرکھتیہیں۔ فیکٹریوںمیںکامکرنےوالیغریبلڑکیاں،جاگیرداروںکےہاریوںکیعورتیں،ملازمتپیشہخواتین،نرسیں،گھروںمیںکامکرنےوالیاں،غرضیکہہرجگہعورتیںآسانشکارہیں۔پرائیعورتمردکےلیےایککھلوناہے۔دلبہلانےکاسامانہے۔جسکےلیےوہموقعتاکتارہتاہے۔انسانکیجبلتجسکےدو “سرے ” ہیں۔ایکسرےپہبھوکاوردوسرےسرےپہجنسہے انسانکواپنیاسفطرتسےمفرنہیںہے۔بہتعامساقاعدہہےجسمردسےبھیکوئیکامپڑےگاوہعورتکوچھیڑےگاضرور۔جتنیاسےجگہملےگیاتنیحدتکجاۓگا۔کیاعورتہوناکوئیجرمہےجسکیسزابنتِحواپاتیرہےگی۔جنسیہراسگیہرسطحپرہے۔نامورخواتینہوںیاعامعورتیں۔عورتکاوجودکشیشاوررعنائیسےبھرپورہے۔اسیلئیےاسلاماسےپردےمیںمقیدکرتاہےلیکنپردہبھیعورتکاتحفظنہیںکرپاتا۔اصلمسلئہسوچکاہے۔شعورکاہے۔ لیکندیگرناقابلحلمسائلکیطرحاسمسلئےکےسلجھنےکیبھیکوئیامیدنظرنہیںآتی۔ باندیاں ۔۔۔۔۔ مرےمالککیاہمباندیاںہیں میرےمالک کیاہمباندیاںہیں جوآگمیںجلاکرماردیجائیں ہموہجوانیاںہیں محبتکےنامپرجومسلدیجائیں ہموہکلیاںہیں ہوسکانشانہبناکر جنکےپرنوچلئےجائیں ہموہتتلیاںہیں جومصلحتکےنامپر قربانکردیجائیںہموہبیٹیاںہیں جوشرعیجائیدادسےمحرومکردیجائیںہموہبہنیںہیں میرےمالک کیوںہمباندیاںہیں...

Mere Mahbook Kahin Aur Milla Kar Mujh Se - Taj Mahah Urdu Poem by Sahir Ludhianvi

Mere Mahbook Kahin Aur Milla Kar Mujh Se – Taj Mahah Urdu Poem by Sahir Ludhianvi

  تاج محل  –  ساحر لدھیانوی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تاج محل تیرے لئے اک مظہرِ الفت ہی سہی تجھ کو اس وادئ رنگین سے عقیدت ہی سہی...

Tauba tun Nasooh

Tauba tun Nasooh by Deputy Nazir Ahmed: Urdu Article by Nadia Umber Lodhi

توبتہ النصوح  ———————– توبتہ النصوح ڈپٹی نذیر احمد کا شہرہ آفاق اصلاحی ناول ہے۔نذیراحمد ایک مذہبی پس منظر رکھتے تھے لہذا انکے تمام ناول مقصدیتکے تحت لکھے گئےان کا اسلوب ہر ناول میں ایک جیسا ہے ۔ ان کیہر ہر سطر سے وعظ کا عنصر چھلکتا ہے۔ اکثر مقامات پر لمبیتقریریں ناول میں بور ریت پیدا کرتی دکھائی دیتی ہیں ۔لیکن چونکہان کا مقصد اصلا حی ہے لہذا یہ خامی قابل قبول ہے۔ یہ ناول موجودہنوجوان نسل کو اسلام پہ عمل کادرس دیتا ہے جو کہ لائق ۔ تحسینہے ۔ یہ ناول ایم اے۔اردو کے نصاُب کا حصہ ہے ایم اردو کے طالب علم ہونے کے باعث ہم نے بھی اپنے زمانہ ۔طالبعلمی میں اس کو باریک بینی سے پڑ ھا لیکن مرے اس مضمون کاڈپٹی نذیر احمد کے ناول سے کوئی تعلق نہین ہے اور نہ ہی یہمضمون ڈپٹی نذیر کے ناول کی پیروڈی ہے نہ ناول پر تنقید مقصد ہےبلکہ یہ مضمون اسلامی تعلیمات توبہ اور استغفار سے متعلق ہے نامکی یکسانیت کی وجہ سے یہ تمہید باندھی گئی۔ توبتہ النصوح سے مراد حتمی توبہ ہے ایسی توبہ جس کے بعد گناہکی طرف واپس لوٹنا ناممکن ہو ۔انسان خطا کا پُتلا ہے ۔ اپنے ماضیپر نظر دوڑائیے ۔ ہم بے شمار گناہ کر کے بھول چکے ہیں ۔ کچھایسے ہیں جو یاد ہیں جن پر کبھی کبھی اشک ۔ ندامت بہا لیتے ہیں ۔کچھ ایسے ہیں جو وقت کی خاک میں مل کر خاک ہوۓ ۔جن کے نام ونشاں بھی مٹ گئے لیکن وہ کراماً کاتبین کے رجسٹر میں درج ہیں یہگناہ ہمارے ساتھ اعمال کی گھٹری میں بندھ کر قبر میں جائیں گے ۔ان گناہوں پر زبانی تو ہم استغفار کر لیتے ہیں لیکن عملی طور پر انسے تائب نہیں ہوتے ۔ یہ مثال دور ِ حاضر کے حاجیوں پر خوبصادق آتی ہے ۔ بیت اللہ کی حاضری قسمت والوں کا نصیب بنتی ہے ۔گڑ گڑا کر اپنے گناہوں کے معافی مانگنے کے بعد کاش کہ ان گناہوںسے اجتناب بھی لازم ہو ۔ اگر یہ حاجی خود کو تبدیل کر کے اپنیاصلاح کر لیں تو شاید ہمارا آدھا معاشرہ سدھر جاۓ لیکن پھر وہیلذت ِ گناہ ۔ جانتا ہوں ثواب طاعت و زہد پر طبعیت ادھر نہیں آتی (غالب) یہ زندگی جس کا آج ہم حصہ ہیں عنقریب اس کی ڈور ہمارے ہا تھوںسے چھوٹنے والی ہے ۔ زندگی جو بے بندگی ہو ۔شرمندگی بن جایا کرتی ہے ۔ دائرہ اسلام میں داخل ہو نے والے ہر مسلمان کا پہلا فرض نماز ہے ۔ موذن دن میں پانچ دفعہ اللہ کے گھر کی طرف بلاتا ہے اور ہم میںسے اکثریت سنی ان سنی کر دیتی ہے ۔جو قدم اٹھاتے ہیں ان میںسے خشوع وخضوع اور نماز کا فیض بھی ہر کسی کے حصے میںنہیں آتا ۔ ایسا کیوں ہے ؟ ہماری عبادات ہمیں وہ نور کیوں نہیں دے پاتی ۔جو ملنا چاہئیے۔ نماز بے حیائی اور بری باتوں سے روکتی ہے تو پھر ہم رک کیوںنہیں پا تے ۔ کیونکہ کمی ہماری نماز میں ہے ۔ مسجد تو بنادی شب بھر میں ایماں کی حرات والوں نے  من اپنا پرانا پاپی ہے، برسوں میں نمازی بن نہ سکا اقبال  کہیں حرام کا لقمہ پیٹ میں ہے تو کہیں دھیان  دنیا میں ۔ کہیں نظر بے حیا ہے تو کہیں حقوق العباد سے غفلت ہے ۔ میر ا مالمیرا نہیں مرے رب کا دیا ہے ۔اسکے بندوں کا اس میں حق ہے مگرمیں تو اسے اپنا مال سمجھتا ہوں ۔اسکو اپنے اوپر خرچ کر تا ہوں ۔کسی کی ضرورت سے مری برانڈنگ زیادہ اہم ہے ۔جس ملک میںلوگ بھوک سے مجبور ہو کے خو کشی کریں ۔ لڑکیاں پیٹ کی آگبجھا نے کے لیے عزتیں نیلام کریں ۔وہاں میں ہزاروں روپے ایکوقت کی ہو ٹلنگ پہ خرچ کرتا ہوں ۔اور پھر مجھے دعوی ہے کہ میںمسلمان ہوں ۔ اپنےرسول کا امتی ہوں –سب سے بہترین صدقہ بھوکےکو روٹی کھلانا ہے ۔ جہنم میں جب مجرموں سے پو چھا جاۓ گا کہ تمہیں کیا چیز جہنممیں لائی ؟ تو وہ کہیں گے ...