Qaid Piranday: Urdu Nazm by Shahida Kanwel

Qaid Piranday: Urdu Nazm by Shahida Kanwel

قید پرندے

کرتے رہے جو سارا سال ، پھولوں کا انتظار

وہ پرندے گُم ہو گئے چمن سے ، عین بہار میں

پھول ٹہنیوں پر ، بہت ہی اداس نظر آئے

کیوں کہ پرندے قید ہو گئے سارے،عین بہار میں

میں پھر بھی تکتا رہا اُن کے واپس آنے کی راہ

 پَر اُن کے کاٹ دئیے صیاد نے ، عین بہار میں

ظالم صیاد کوکسی طرح بھی سمجھاو، کہ چھوڑ دے

بغیر پرندے پھول مُرجھا رہے ہیں، عین بہار میں

Shahida Kanwel
Tourism Management, Zhejiang University, China 

 

bird in age - rod-long-unsplash

 

Facebook Comments

You may also like...