Lamha Bhar Ki Kahaani: Urdu Poem by Sonia Akmal Qureshi

“لمحہ بھر کی کہانی ہے اور بس”

“کردار ‘ زندہ رہتا ہے مرنے کے بعد بھی

 یہ حسن لمحہ بھر کی کہانی ہے اور بس‎”

کون ساری عمر محبت میں گنوائے

یہ محبت لمحہ بھر کی کہانی ہے اور بس

ہے دل سانس کی ڈگڈگی پہ محو رقص

یہ سانس لمحہ بھر کی کہانی ہے اور بس

عہد کرتے جانا ہے فطرتِ انساں

یہ عہد لمحہ بھر کی کہانی ہے اور بس

کون ساتھ دیتا ہے عمر بھر انساں!

یہ ساتھ لمحہ بھر کی کہانی ہے اور بس

 – سونیا اکمل قریشی –

Melancholia : Poem by Prof. Dr. Waseem Anwar

 

Facebook Comments

You may also like...