Urdu Ghazal by Afira Waheed

میری زندگی مجھ سے روٹھ گئی

میری زندگی مجھ سے روٹھ گئی
اور سانس کی ڈور ہے چھوٹ گئی
میری آس امید کی کشتی اک
شازسوں کے دریا میں ڈوب گئی
میری یادوں کے صندوقوں میں
تیرے پیار ک نغمے باقی ہیں
تیرے خوابوں کی تعبیروں میں
کیا محبت کی زنبلیں ٹوٹ گئی ؟
تیری چاہت کی ہواؤں میں
میں آج بھی لہراتی پھرتی ہوں
کیا تیری جھیل سی آنکھوں کو
میری ہنستی تصویریں بھول گئی ؟
میرے دل کے اب صحراؤں میں
تیرے ہجر کا ملال باقی ہے
تیرے قلب کی رنگیں نگری کیا
میری جدائی کا زخم بھول گئی ؟

 

 

Facebook Comments

You may also like...