Woh Ik Suhanay Khawab Ki Ibtida: Urdu Poem by Rimsha Shah

Woh Ik Suhanay Khawab Ki Ibtida: Urdu Poem by Rimsha Shah

 

وہ ایک سہانے خواب کی  ابتدائی  ایک تھی

 ایک  گہرائی میں جانا تھا  جس کی کوئی حد نہ تھی

 کہنے کو تو یہ دوستی تھی

 پر بیان کرنے میں یہ بے نام تھی

  یہ دو  زندگیوں  کی ایک زندگی تھی

 ایک دوسرے میں تھی بھی اور نہیں بھی

 یہ کہانی “تم” تم سے شروع ہوئی تھی  اور “میں” سے

 پر یہ کہانی تیرے ہی نام سے تھی “تم”

 “میں” اور ‘تم’ ملے بس ایک دوستی کے نام سے

 دوستی کی گہرائی میں گئے بے نام کے  رشتے سے

 تھی تو اس کہانی میں  ‘تم’ اور  “میں”

                                                     ” پر”

 یہ کہانی تیرے ہی نام سے تھی “تم”

 یہ جو وقت گزرا اس میں “تم” “میں” میں محبت تھی

 پر جیسےایک کانچ ٹوٹا  ویسے ہی ایک    سوہانا  خواب

 اب “تم” تم نہ رہی اور “میں” کہیں کھو گئی

 اب اس کہانی میں “میں” تو ہے

پر  یہ کہانی تیرے ہی نام سے ہے ‘تم”

 

Woh Ik Suhanay Khawab Ki Ibtida: Urdu Poem by Rimsha Shah

Woh Ik Suhanay Khawab Ki Ibtida: Urdu Poem by Rimsha Shah

 

 

 

Facebook Comments

You may also like...