Kal Arsay Baad: Urdu Poem by Asma Tariq

Kal Arsay Baad: Urdu Poem by Asma Tariq

 

کل عرصے بعد

تم کو جاتے دیکھا

تم ویسے ہی تھے

کئی سال پرانے

الجھے سے

ایک یہی بات ہماری

 ملتی جلتی تھی

کہ سنتے نہیں تھے تم کسی کی

اور سنتے ہم بھی نہیں تھے

پر کافی اچھے دن تھے

بہانے بہانے سے ہم لڑتے تھے

کل تمہیں دیکھا تو

یاد آیا

کچھ باتیں رہتی تھیں

کئی سال پرانی

جو تم سے کرنا باقی تھیں

پر وقت قلیل ملا تھا

تم کو شاید کہیں جانا تھا

مجھکو بھی جلدی تھی

Asma Tariq - Ravi Magazine

 

اسماء طارق

گجرات

Facebook Comments

You may also like...