Mehram Mere Baad Tuhmare – Ghazal by Tariq Iqbal Haavi

Mehram Mere Baad Tuhmare – Ghazal by Tariq Iqbal Haavi

محرم میرے بعد تمھارے
مت پوچھو دن کیسے گزارے
بھاری آنکھیں اٹا ہوا دل
کسے بتاؤں راز میں سارے
بے رنگ صبحیں بوجھل شامیں
کوئی بھلا کیوں خود کو سنوارے
روز ہی تیرے لمس کو ڈھونڈیں
شام ڈھلے ہم جھیل کنارے
ہم ہی جھلے سوچیں تجھ کو
اور تم سوچو اپنے بارے
دید کو تیری ترس گئے ہیں
راہیں تکتے نین بیچارے

(شاعر طارق اقبال حاوی)

 

 

steve-halama-love-ghazal

 

Facebook Comments

You may also like...