کوئی غم کی بات لِکھو – Urdu Ghazal by Kawish Abbasi

 کوئی غم کی بات لِکھو – Urdu Ghazal by Kawish Abbasi


 کوئی غم کی بات لِکھو
 ایک مُسَلسل رات لِکھو

 فِسق کے لمبے ہات لِکھو
 خَیر کی خود سے مات لِکھو

 گدلے کھارے پانی میں
 ڈُوبے ہوئے حالات لِکھو

 اِک مسموم دباؤ میں
 ہر ذات و ما ذات لِکھو

 زور و زر کی جِیت لِکھو
 اہلِ عشق کی مات لِکھو

 کہیں ہے درد اُلَجھتا ہوا
 کہیں سکون صِفات لِکھو

 آئی بروئے کار سدا
 عاشِقوں ہی کی ذات لِکھو

 دِلد ا ر و فردا افروز
 شہر کی جاگتی رات لِکھو

 اُن سےسُخَن کی خیالوں میں
 سدا رواں بارات لِکھو

 درِ جاناں سے ہم کو مِلی
 اشکوں کی سوغات لِکھو

 خواب سے کچھ عہد و پیماں
 خواب سی اِک بارات لِکھو

 مُجھ میں سمائی اُن کے لئے
 ایک انوکھی بات لِکھو

Comments

comments

You may also like...